کھیل

پاکستان بمقابلہ نیوزی لینڈ: 164 کے تعاقب ٹم سائیفرٹ اور ولیمسن کی برق رفتار نصف سنچریوں کی بدولت کیویز کی نو وکٹوں سے جیت، ٹی ٹوئنٹی سیریز میں فتح

یوزی لینڈ کے شہر ہیملٹن میں کھیلے جانے والے دوسرے ٹی ٹوئنٹی میچ میں پاکستان کے 164 رنز کے جواب میں کیویز نے ٹم سائیفرٹ کی مسلسل دوسری اور کپتان کین ولیمسن کی برق رفتار نصف سنچریوں کی بدولت ہدف ایک وکٹ کے نقصان پر پورا کر کے سیریز میں جیت حاصل کر لی ہے۔

گذشتہ میچ میں نصف سنچری بنانے والے سائیفرٹ اور کین ولیمسن نے پاکستانی بولنگ کے پرخچے اڑا دیے اور 129 رنز کی ناقابل شکست شراکت قائم کی جس کی مدد سے انھوں نے 164 کا ہدف باآسانی پورا کر لیا۔

چار وکٹیں حاصل کرنے پر ٹم ساؤتھی کو مین آف دا میچ کا اعزاز ملا۔

کرکٹ

اکستان کی جانب سے فہیم اشرف نے سب سے نپی تلی بولنگ کی اور واحد وکٹ لینے والے بھی وہی تھے۔

لیکن کپتان شاداب خان کے علاوہ اور کوئی بولر ان کی مدد نہ کر سکا۔ وہاب ریاض بالخصوص سائیفرٹ کے زیر اعتاب آئے اور صرف ایک اوور میں 19 رنز دیے اور دوبارہ انھیں بولنگ نہیں ملی ۔

اور اسی اوور کے بعد پھر ولیمسن اور سائیفرٹ نے پیچھے مڑ کر نہیں دیکھا اور بالترتیب 64 گیندوں پر 57 اور 63 گیندوں پر 84 رنز حاصل کیے۔

مجموعی طور پر کیوی بلے بازوں نے چھ چھکے اور 17 چوکے لگائے۔

کرکٹ

نیوزی لینڈ کے لیے گپٹل نے تیز آغاز کیا اور 11 گیندوں پر دو چھکے اور ایک چوکے کی مدد سے 21 رنز بنائے لیکن فہیم اشرف کو دوسرا چھکا لگانے کی کوشش کرتے ہوئے وہ کیچ آؤٹ ہو گئے۔

فوراً بعد ولیمسن بچ گئے جب گیند نے ان کے بلے کا باہری کنارہ لیا اور سلپ کے بیچ سے نکل گئی اور انھیں چار رنز مل گئے۔

لیکن اس کے بعد سائیفرٹ نے پاکستانی بولنگ کو آڑے ہاتھ لینا شروع کیا اور حارث اور فہیم کی قدرے بہتر بولنگ کے باوجود پریشان نہیں ہوئے اور وہاب ریاض کو ان کے پہلے ہی اوور میں تین بلند و بالا چھکے رسید کر کے 19 رنز حاصل کیے۔

پاکستانی اننگز کا حال

کرکٹ

اکستانی اننگز کا سارا دارو مدار محمد حفیظ کے کندھے پر رہا جنھوں نے پانچ چھکوں اور دس چوکوں کی مدد سے بہترین بیٹنگ کرتے ہوئے 99 رنز بنائے اور آؤٹ نہیں ہوئے۔

کیویز کی جانب سے ٹم ساؤتھی نے اپنے چار اوورز کے سپیل میں عمدہ بولنگ کی اور 21 رنز کے عوض چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

میچ کے پہلے اوور میں رضوان نے دو چوکے لگائے اور دوسرے اوور میں حیدر علی نے ایک بلند و بالا چھکا لگا کر اپنے عزائم ظاہر کیے لیے ساؤتھی نے ان کو دو گیندوں بعد ایک اور شاٹ کھیلنے پر مجبور کیا اور وہ ولیمسن کے ہاتھ کیچ ہو گئے۔

اوور کی آخری گیند پر نوجوان بیٹسمین عبداللہ شفیق صفر پر ایک غیر ذمہ دارانہ شاٹ کھیلتے ہوئے آؤٹ ہو گئے اور ساؤتھی کو اوور میں دوسری وکٹ دے دی۔

کرکٹ

چھٹے اوور میں ساؤتھی نے اپنی خوبصورت سوئنگ بولنگ جاری رکھی اور محمد رضوان نے باہر جاتی ہوئی ایک گیند کا تعاقب کیا اور کیچ ہو گئے۔

اننگز کے آٹھویں اوور میں نئے بولر کوگیلئین آئے تو محمد حفیظ نے جارحانہ انداز اپنایا اور اوور میں دو چوکے لگائے۔

نویں اوور میں جمی نیشم اپنا پہلا اوور کرانے آئے تو انھوں نہ شاداب خان کو شارٹ پچ گیند کرائی اور کپتان شاداب اسے کنٹرول نہیں کر سکے اور کیچ ہو گئے۔

کرکٹ

نیوزی لینڈ کے عمدہ بولنگ کے سامنے پاکستانی بیٹنگ کھل کر نہ کھیل سکی لیکن حفیظ اور خوشدل نے مزاحمت کا اچھا مظاہرہ کیا اور 15ویں اوور میں حفیظ نے نہ صرف اپنی ففٹی مکمل کی بلکہ وہ پاکستان کی جانب سے ٹی ٹوئنٹی میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے بلے باز بھی بن گئے۔

لیکن اش سودھی کے اوور میں ان دونوں کی 62 رنز کی شراکت ختم ہو گئی جب خوشدل نے ایک اونچا شاٹ کھیلا جو یقینی چھکا تھا لیکن باؤنڈری پر کیویز کے سب سے اچھے فیلڈر گپٹل موجود تھے جنھوں نے کیچ پکڑ لیا۔

ٹم ساؤتھی نے اپنے واپسی کے میچ میں بہترین بولنگ کرتے ہوئے اپنے چار اوورز میں چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا جس میں آخری وکٹ فہیم اشرف کی تھی جو 18ویں اوور میں چار رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔

تین میچوں کی سیریز میں جمعے کو کھیلے جانے والے پہلے میچ میں میزبان نیوزی لینڈ نے پاکستان کو پانچ وکٹوں سے شکست دے دی تھی۔

آج کے میچ میں کیویز کے کپتان کین ولیمسن کی ٹیم میں واپسی ہو گئی ہے جو اپنی پہلی اولاد کی پیدائش کے باعث سیریز کا پہلا میچ نہیں کھیل سکے تھے۔

نیوزی لینڈ نے کے پہلے میچ کے ہیرو ڈفی کو دوسرے میچ میں ٹیم سے ڈراپ کر دیا اور مجموعی طور پر چار تبدیلیاں کی ہیں جن میں کپتان کین ولیمسن اور تجربہ کار بولر ٹم ساؤتھی کو شامل ہیں جبکہ پاکستان نے وہی ٹیم برقرار رکھی ہے۔

کرکٹ

گذشتہ میچ میں کپتان شاداب خان کی قائدانہ صلاحیتوں اور بیٹنگ کو خاصی پذیرائی ملی تھی اس لیے اس میچ میں اب یہ دیکھنا ہو گا کہ وہ بولنگ میں ٹیم کے لیے کتنے مفید ثابت ہوتے ہیں۔

ان کے علاوہ گذشتہ میچ میں فہیم اشرف نے اپنی آلراؤنڈ پرفارمنس سے سب کو حیران کیا تھا اور حارث رؤف اور شاہین شاہ آفریدی نے اچھی بولنگ کا مظاہرہ کیا تھا۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے گذشتہ میچ میں اوپنر ٹم سائیفرٹ نے عمدہ نصف سنچری کی تھی اور آج ان کین ولیمسن کی ٹیم میں شمولیت کے بعد نیوزی لینڈ کی بیٹنگ بھی مزید تجربہ کار نظر آئے گی۔

Via
Bbc Urdu
Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button