ساہیوال نیوز

پاکستان کی ترقی کسان کی خوشحالی سے منسلک ھے

ساہیوال( )پاکستان کی ترقی کسان کی خوشحالی سے منسلک ھے۔ زرعی شعبے کو بنیادی سہولیات فراہم کئے بغیر زرعی خود کفالت کی منزل حاصل نہیں کی جا سکتی،زراعت انسانی تہذیب کا سب سے قدیم پیشہ ہے جس کی اہمیت سے انکار ممکن نہیں،ضلعی انتظامیہ کسانوں کو در پیش مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کر رہی ہے تا کہ پیداوار میں اضافہ ہو اور انہیں فصلوں کا پورا معاوضہ مل سکے -یہ بات ڈپٹی کمشنر بابر بشیر نے اپنے دفتر میں کسان اتحاد اور کسان بورڈ کے عہدیداران سے خصوصی ملاقات کے دوران کہی جس میں کسانوں کو در پیش مسائل پر تفصیلی غور و غوض کیا گیا- اے ڈی سی جنرل شیر افگن، ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت رانا حبیب الرحمن اور مکئی اور جوار ریسرچ فارم یوسف والا کے ڈائریکٹر ڈاکٹر محمد ارشد کے علاوہ کسان رہنماؤں چوہدری سعید رندھاوا،رانا زاہد فاروق،محمد بنیا مین اور چوہدری مراد بخش نے بھی اجلاس میں شرکت کی -ڈپٹی کمشنر نے محکمہ اریگشین اور میپکو سے متعلق کسانوں کی شکایات کے ازالے کے لئے اے ڈی سی جنرل کی سربراہی میں ذیلی کمیٹی بھی قائم کر دی تا کہ مسائل کو ترجیحی بنیادوں پر حل کرایا جا سکے -ڈپٹی کمشنر بابر بشیر نے بتایا کہ ساہیوال کی غلہ منڈی،فروٹ منڈی اور سبزی منڈی کو پاکپتن روڈ کی نئی جگہ پر منتقل کرنے کے لئے ٹھوس اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں جس سے کسانوں اور بیوپاریون کو درپیش بہت سے مسائل حل ہو جائیں گے – انہوں نے اراضی ریکارڈ سنٹرز پر کسانوں کو در پیش مشکلات کا بھی نوٹس لیا اور یقین دلایا کہ عملے کی شدیدکمی کے باوجود سروس ڈیلوری کو بہتر بنایا جائے گا -ا س سے پہلے کسان نمائندوں نے منڈیوں میں الیکٹرنک کنڈوں کی عدم تنصیب،محکمہ زراعت کے فیلڈ افسران کا کسانوں سے رابطہ نہ ھونے،نہروں کی بلا اطلاع بندش،ٹیل پر نہری پانی نہ پہنچنے اور گوگیرہ برانچ کی 5سال سے بندش کے مسائل اٹھائے اور مطالبہ کیا کہ ضلعی انتظامیہ فصلوں کی پیداوار میں اضافے کے لئے ان شکایات کو فوری دور کرائے۔

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button