بین الاقوامی

ناکام حکومتیں جنگ کا سہارا لیتی ہیں ، نوجوت سنگھ سدھو کی مودی سرکار پرشدید تنقید

جس جنگ میں بادشاہ کی جان کو خطرہ نہ ہو، اس کو جنگ نہیں سیاست کہتے ہیں:سابق کرکٹر

کانگریس رہنما اور پنجاب کے وزیر نوجوت سنگھ سدھو نے کہا کہ ناکام حکومتیں جنگ کا سہارا لیتی ہیں۔ آپ اپنے کھوکھلے سیاسی مقاصد کیلئے اور کتنے بے قصور لوگوں اور جوانوں کی قربانی لوگے، ہندوستان اور پاکستان کے درمیان کشیدہ حالات میں سدھو نے چانکیہ کے ایک قول کو ٹوئیٹ کیا ہے۔ سدھو کے ٹوئٹ کے مطابق ”جس جنگ میں بادشاہ کی جان کو خطرہ نہ ہو، اس کو جنگ نہیں سیاست کہتے ہیں“، اس ٹوئٹ میں انہوں نے سوال اٹھایا، ناکام حکومتیں جنگ کا سہارا لیتی ہیں،آپ اپنے کھوکھلے سیاسی مقاصد کیلئے اور کتنے بے قصور لوگوں اور جوانوں کی قربانی لوگے۔

کرکٹر سے رہنما بننے والے سدھو نے مزید کہا کہ ”میں اپنے اس یقین کے ساتھ کھڑا ہوں کہ سرحد کے اندر اور اس کے پار سے آپریٹنگ دہشت گرد تنظیموں کی موجودگی اور سرگرمیوں کا طویل مدتی تلاش کرنے میں بات چیت اور ڈپلومیٹک پریشر اہم رول ادا کرے گا، انہوں نے کہا کہ دہشت کا حل امن اور ترقی ہے،بیروزگار، نفرت اور ڈر نہیں“۔

کانگریسی رہنما نے یہ بیان ایسے وقت پر دیا جب پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے امن کی بات کی تھی اور سرحد پر بڑھتی کشیدگی کے درمیان ہندوستان کو بات چیت کی دعوت دی تھی اور ساتھ انہوں نے فضائیہ کے پائلٹ ونگ کمانڈر ابھی نندن ورتھمان کو رہا کرنے کا اعلان کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ وہ اس اصول کے ساتھ مضبوطی سے کھڑے ہیں کہ کچھ لوگوں کی سرگرمیوں کے لئے پوری کمیونٹی کو ذمہ دار نہیں ٹھہرایا جاسکتا۔ غور طلب ہے کہ جموں و کشمیر کے پلوامہ میں 14 فروری کو پاکستان کی ایک دہشت گرد تنظیم کے خودکش حملے میں 40 سی آر پی ایف جوانوں کے شہید ہونے کے واقعہ کی کڑی مذمت کرتے ہوئے سدھو نے سوال کیا تھا کہ کیا کچھ لوگوں کی سرگرمیوں کیلئے پورے ملک کو ذمہ دار ٹھہرایا جاسکتا ہے۔ اس سے پہلے سدھو نے گزشتہ جمعرات کو اس بات پر زور دیا کہ سرحد پار فعال دہشت گرد تنظیموں سے متعلق طویل مدتی حل کیلئے بات چیت اور ڈپلومیٹک پریشر اہم ہوگا۔

 

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close