کھیل

بھارت کی پاکستان سپر لیگ کو نقصان پہنچانے کی کوشش

بھارتی پروڈکشن کمپنی آئی ایم جی کا پی سی ایل سے معاہدہ ختم کرنےکا فیصلہ

مقبوضہ کشمیر کے علاقے پلواما میں بھارتی فورسز پر حملے میں 44فوجیوں کی ہلاکت کے بعد ایک طرف ہندوستانی میڈیا پاکستان مخالف پراپگنڈا پھیلانے میں لگا ہوا ہے وہیں گوتم گمبھیر جیسے سبق کرکٹر ز بھی اس واقعے پر پاکستان کے ساتھ جنگ کرنے کا مشورہ دے رہے ہیں جبکہ ایک بھارتی کرکٹ ویب سائٹ نے بھی ”حب الوطنی “ کے نام پر پاکستان سپر لیگ کی اپ ڈیٹس دینا بند کردی ہیں جب کہ گزشتہ تمام ڈیٹا بھی ڈیلیٹ کردیا اور اب پاکستان سپر لیگ(پی ایس ایل ) کی پراڈکشن کمپنی آئی ایم جی نے پی سی ایل سے معاہدہ ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے ،ذرائع کے مطابق کمپنی نے پاکستان کرکٹ بورڈ(پی سی بی)کو ٹورنامنٹ کے دوران میں ہی کام چھوڑ کر جانے سے آگاہ کردیا ہے ،آئی ایم جی پراڈکشن کمپنی ”امبانی گروپ“ کی ملکیت ہے، پاکستان سپر لیگ میں اب ٹیمیں دو دن کو ئی میچ نہیں کھیلیں گی اور پی سی بی کیلئے 2 دن میں نئی پراڈکشن کمپنی تلاش کرکے ایونٹ جاری رکھنا سخت چیلنج بن گیاہے۔ پاکستان کرکٹ بورڈ کے منیجنگ ڈائریکٹر وسیم خان نے آئی ایم جی پروڈکشن کمپنی کے اس اقدام کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ پی سی بی کو کمپنی کے اس اقدام پر بہت مایوسی ہوئی ،پی سی بی نئی کمپنی سے بات چیت کرنے کے بعد پیر کے روز معاہدے کا اعلان کرے گا ۔ یاد رہے کہ اس سے قبل کرکٹ کلب آف انڈیا سے پاکستان کے وزیر اعظم عمران خان کی تصاویر کو ہٹا دیا گیا۔ وزیر اعظم عمران خان کا بطور کرکٹر پورٹریٹ کرکٹ کلب آف انڈیا کی عمارت میں نصب تھا جسے پلوامہ واقعہ کے بعد ہٹا دیا گیا۔انتظامیہ کا موقف ہے کہ عمران خان کا بطور کرکٹر پورٹریٹ اتارا نہیں گیا بلکہ چھپا یا گیا ہے اور یہ چیز پلوامہ واقعے پر احتجاج رجسٹر کروانے کا طریقہ ہے۔اس حوالے سے تازہ ترین خبر یہ ہے کہ بھارت نے پی ایس ایل کی براڈکاسٹ بھی بھارت میں رکوا دی ہے۔اس حوالے سے معروف صحافی غریدہ فاروقی کا بتانا تھا کہ بھارت کی جانب سے پی ایس ایل براڈکاسٹ کرنے والے میڈیا گروپ پر دباﺅڈالا جا رہا ہے۔جس کے نتیجے میں بھارت میں پی ایس ایل کی نشریات روک دی گئی ہیں جس کے بعد بھارت میں شائقین کرکٹ کو پی ایس ایل کی نشریات دیکھنے سے محروم کر دیا گیا۔

 

Show More

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Close
Close